مولانا فضل الرحمان نے کورنا وائرس کے بارے میں انوکھی منطق پیش کردی،ویڈیو دیکھیں

Spread the Story
  • 213
    Shares

اسلام آباد (جی سی این رپورٹ) ”جب انسان سوتا ہے تو کورونا وائرس بھی سو جاتا ہے اور انسان مرتا ہے تو وائرس بھی مر جاتا ہے” جمعیتِ علماء اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کورونا کے حوالے سے انوکھی منطق دی ہے کہ ڈاکٹرز کہتے ہیں کہ جب انسان سوتا ہے تو کورونا وائرس بھی سو جاتا ہے، اس لیے انسان کے مرنے کورونا وائرس بھی مر جاتا ہے۔انہوں نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ لاشیں ورثاء کے حوالے نہیں کی جاتیں، تدفین کی بے حرمتی کی جاتی ہے اور میت کو قبر میں پھینک دیا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے بتایا جائے کہ میت دفنانے سے کسی کو کرونا لگا ہو؟ ڈاکٹر کہتے ہیں آپ زیادہ سوئیں۔ آپ سوئیں گے تو آپ کا وائرس بھی سو رہا ہوگا اور وہ متحرک نہیں رہے گا اور نقصان نہیں کرے گا، جب وہ سونے کے ساتھ سو جاتا ہے تو مرنے کے ساتھ مربھی جاتا ہے۔

مولانا فضل الرحمان نے اس موقع پر مزید کہا کہ ایک عجیب سی صورتحال پیدا کردی گئی ہے، اموات پر مبالغہ کیا جارہا ہے کہ دل کا مریض فوت ہوگیا، کرونا کی وجہ سے فوت ہوگیا، گردوں کا مریض فوت ہوگیا، کرونا سے فوت ہوگیا، جگر کا مریض فوت ہوگیا، کرونا سے فوت ہوگیا۔ اس طرح اموات کی شرح کو بڑھا چڑھا کر پیش کیا جارہا ہے۔ پتہ نہیں وہ کس مقاصد کیلئے اس قسم کی فضا پیدا کرنا چاہتے ہیں۔مولانافضل الرحمان نے کہا تھا کہ موجودہ حکومت میں ملک دیوالیہ ہوچکا،بجٹ بنانےمیں بھی مشکلات کا سامنا ہے۔ سربراہ جے یو آئی نے مطالبہ کیا تھا کہ مکمل ایس اوپیز کے تحت دینی مدارس سمیت دیگر سرکاری اور نجی تعلیمی اداروں کو سرگرمیاں جاری رکھنے کی اجازت دی جائے۔ تعلیمے ادرے بند رکھنے سے طلبا کا قیمی سال ضائع ہونے کا امکان پیدا ہوگیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.