ماسک نہ پہننے پر پولیس نے تین افراد کو گولی مار دی

Spread the Story
  • 213
    Shares

نیروبی (جی سی این رپورٹ) : کینیا میں ماسک نہ پہننے پر پولیس اور شہریوں کے درمیان تنازع، پولیس نے تین افراد کو گولی مار دی، تفصیلات کے مطابق کینیا کی وادی شگاف کے علاقے میں واقع ایک قصبے میں ماسک نہ پہننے پر شہریوں اور پولیس کے درمیان تنازع پیدا ہو گیا اور جھگڑا بڑھنے پر پولیس نے فائرنگ کردی اور فائرنگ کی زد میں آکر ایک شخص جاں بحق ہوگیا جبکہ اس کے بعد پھوٹنے والے مظاہروں میں پولیس کی فائرنگ سے مزید 2 افراد مارے گئے۔
کینیا کی پولیس نے شہریوں کے جاں بحق ہونے کی تصدیق کر دی ہے، تاہم پولیس کا موقف مقامی آبادی سے مختلف ہے۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق عینی شاہدیں کا کہنا ہے کہ لسوس کے علاقے میں تنازع اس وقت شروع ہوا جب لوگوں نے ایک موٹرسائیکل ٹیکسی کے ڈرائیور کو گرفتاری سے بچانے کی کوشش کی، جس نے ماسک نہیں پہنا ہوا تھا۔جب پولیس نے ڈرائیور کو حراست میں لینے کی کوشش کی تو لوگ مشتعل ہوگئے جس پر پولیس نے گالی چلا دی جس سے ایک موچی جاں بحق ہوگیا۔اس حوالے سے عینی شاہدین کا دعویٰ ہے کہ پولیس نے 5 فائر کیے تھے۔ ایک شخص کی ہلاکت کے بعد لوگ مشتعل ہو گئے اور انہوں نے پولیس کے مقامی سربراہ کے گھر کو آگ لگا دی اور پولیس اسٹیشن پر پتھراؤ کیا۔ مشتعل ہجوم کو منتشر کرنے کے لیے پولیس نے ایک بار بھر فائرنگ کی جس سے مزید دو افراد ہلاک ہو گئے۔ کینیا پولیس کے ترجمان چارلس اوینو نے اپنے اپنے موقف میں کہا ہے کہ دوسرے موٹرسائیکل سواروں نے اپنے ساتھی کو گرفتاری سے بچانے کی کوشش کی جو دو سواریوں کو لے جا رہا تھا۔
انہوں نے بتایا کہ حکومت نے موٹرسائیکل ٹیکسیوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ کرونا وائرس کا پھیلاؤ روکنے کے لیے اپنی ٹیکسی پر صرف ایک سواری بٹھائیں۔ اوینو کے مطابق موٹرسائیکل سواروں نے پولیس اہل کار سے اس کی بندوق چھیننے کی کوشش جس کی وجہ سے گولی چلی۔ پولیس نے گولی چلانے والے پولیس اہل کار کو معطل کر دیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.