آپ کو قرض مانگتے ہوئے شرم نہیں آتی؟‘‘ پارس جہانزیب نے وزیر اعظم سے سخت سوال پوچھ لیا، عمران خان کا جواب اینکر کو پریشان کر گیا

Spread the Story
  • 213
    Shares

آپ کو قرض مانگتے ہوئے شرم نہیں آتی؟‘‘ پارس جہانزیب نے وزیر اعظم سے سخت سوال پوچھ لیا، عمران خان کا جواب اینکر کو پریشان کر گیا

اسلام آباد (گلوبل کرنٹ نیوز) گزشتہ روز وزیر اعظم عمران خان نے نجی ٹی وی چینل کو خصوصی انٹر ویو دیا ، جو کہ ہوسٹ اور مشہور خاتون اینکر پارس جہانزیب نے لیا، دوران انٹرویو پارس جہانزیب نے سوال پوچھ لیا کہ آپ کو قرض مانگتے ہوئے شرم نہیں آئی۔

تفصیلات کے مطابق پارس جہازیب کا سوال سن کر وزیر اعظم عمران خان نے جواب دیا کہ جب آپ کسی رشتے دار کے پاس پیسے مانگنے جاتے ہہیں تو آپ کو شرم آتی ہے مجھے بھی دوست ممالک کے پاس جاتے ہوئے بہت شرم آئی، شرمندگی کے باوجود پاکستان کی خاطر یہ قدم اُٹھانا پڑا۔

انٹرو ویو دیتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ میں اپوزیشن کی جانب سے مجھ سے استعفیٰ مانگا جا رہا ہے، میں نے اسلام آباد میں ایک سو چھبیس دن کا دھرنا دیا تھا، اپوزیشن والوں نے ساتھ دن بھی دھرنے میں گزار دیئے تو پھر میں واقعی ہی مستعفی ہونے کے بارے میں سوچنا شروع کر دوں گا۔


دوران پروگرام اینکر پرسن پارس جہانزیب نے سوال کیا کہ ’’اگر پی ڈی ایم استعفے دیتی ہے تو آپ منظور کریں گے؟‘‘۔ جس کا جواب دیتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ’’وزیراعظم منظور؟ میں تو انتظار کر رہا ہوں یہ استعفے دیں، میں ایمانداری سے کہہ رہا ہوں اس میں پاکستان کی بہتری ہو گی،انشاءاللہ‘‘۔

وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ میرا وزیر یا پھر کوئی مشیر کیوں اسرائیل جائے گا؟ ہماری واضح پالیسی ہے کہ ہم نے اسرائیل کو تسلیم نہیں کرنا ، پھر وزیر وہاں جا کر کیا کرے گا؟ یہ خبر غلط ہے۔

وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ میں پھر سے آپ کو بتا رہا ہوں ، ایک پوری کمپین چل رہی ہے، جو یورپی یونین کی لیب کی جانب سے ہندوستان کا یاک نیٹورک بے نقاب کیا گیا ہے، اس نیٹ ورک میں پاکستانی بھی شامل ہیں، جو افرا تفری پھیلائی جا رہی ہے یہ لوگ ان سے ملے ہیوئے ہیں۔

وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی اسٹاک مارکیٹ جو اوپر جارہی ہے اسے کوئی پکڑ کر اوپر تو نہیں لیجا رہا ، بزنس میں لوگوں کا اعتماد بڑا ہے تو پھر ہی یہ سب ہورہا ہے نا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.