ترک صدر کے ساتھ آئی دوشیزہ کون ہے

Spread the Story

اسلام آباد ( جی سی این رپورٹ) ترک صدر کے ساتھ پاکستان کے دورے پر آئی خاتون کے سوشل میڈیا پر چرچے، فاطمہ ابو شناب رجب طیب اردگان کی مترجم ہیں اور ہر غیر ملکی دورے پر ان کے ہمراہ ہوتی ہیں، ان کی والدہ ترک صدر کی دیرینہ ساتھی تھیں۔ تفصیلات کے مطابق ترک صدر رجب طیب اردگان پاکستان کا 2 روزہ خصوصی دورہ مکمل کر کے اپنے وطن واپس لوٹ گئے ہیں۔

رجب طیب اردگان نے 3 سال کے وقفے کے بعد وزیراعظم عمران خان کی خصوصی دعوت پر پاکستان کا دورہ کیا۔ اس دورے کے دوران ترک صدر رجب طیب اردگان کے ہمراہ ایک خاتون بھی آئیں جو ہر جگہ ان کے ساتھ رہیں۔ اس خاتون کے سوشل میڈیا پر خوب چرچے ہو رہے ہیں۔ خاص کر پاکستانی سوشل میڈیا صارفین اس تجسس میں مبتلا ہیں کہ یہ خاتون آخر ہے کون اور کیوں ترک صدر رجب طیب اردگان کے ساتھ ساتھ رہتی ہے۔

بتایا گیا ہے کہ ترک صدر کے ہمراہ پاکستان آنے والی اس خاتون کا نام فاطمہ ابو شناب ہے جو طیب اردگان کی مترجم ہیں۔ فاطمہ ابو شناب ایک بہت ہی قابل خاتون مانی جاتی ہیں جو ترکی کی مشہور مسلمان خاتون سیاستدان مروہ قواکچی کی صاحبزادی ہیں۔ مروہ قواکچی کو اپنے اسلامی نظریات کی وجہ سے ترکی میں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا تھا اور اپنی پارلیمنٹ کی رکنیت اور شہریت سے بھی ہاتھ دھو بیٹھی تھیں۔

تاہم رجب طیب اردگان کے اقتدار میں آنے کے بعد مروہ قواکچی کو بیرون ملک ترکی کا سفیر تعینات کر دیا گیا تھا۔ جبکہ اب ان کی صاحبزادی فاطمہ ابو شناب بھی ایک مشہور شخصیت بن چکی ہے اور ترک صدر رجب طیب اردگان کے قریبی ترین ساتھیوں میں سے ایک تصور کی جاتی ہیں۔ ایک بار پھر واضح رہے کہ ترک صدر رجب طیب اردگان 2 روز کے خصوصی دورے کیلئے پاکستان آئے تھے۔ اس دورے کے دوران انہوں نے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کیا، جبکہ پاکستان اور ترکی کے درمیان 13 اہم ترین معاہدوں پر دستخط کیے گئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.