مولانا فضل الرحمان پھنس گئے

Spread the Story

اسلام آباد ( جی سی این رپورٹ) مولانا فضل الرحمان کو پارٹی میں بغاوت کا سامنا۔ تفصیلات کے مطابق ایک نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے سینئر صحافی رانا عظیم نے انکشاف کیا ہے کہ مولانا فضل الرحمان کو انکی پارٹی کے اندر سے ہی شدید مخالفت کا سامنا ہے۔ انھوں نے کہا کہ مولانا صاحب کے خلاف انکی اپنی ہی جماعت کے خلاف بڑے پیمانے پر ٹوٹ پھوٹ متوقع ہے، انکو اپنے ہی ہوم گراؤنڈ بلوچستان سے سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا اور خیبرپختونخوا سے بھی مشکلات بھی درپیش ہونگی، انکے لئے آنے والے دن بہت ہیں۔

انکا کہنا تھا کہ مولانا فضل الرحمان جیسے ہی اپنی تحریک کا آغاز کرینگے، انکو بغاوت کا سامنا شروع ہوجائیگا اور بہت سے لوگ انھیں چھوڑتے چلے جائینگے۔

انکا مزید کہنا ہے کہ اب وہ ایک بڑی سیاسی جماعت کو یقین دہانی کرارہے ہیں کہ ہم نکلیں گے تو اپنے لیے لیکن موقف آپکا ہی رہیگا۔ مولانا صاحب کو انکے اپنے لوگوں نے یہ کہا ہے کہ آپ نے کہا تھا کہ ہمیں یہ یہ مل جائے گا لیکن کوئی بھی آپکی بات کی تصدیق نہیں کررہا، مولانا تین استعفے لینے گئے تھے لیکن انہیں ایک بھی استعفیٰ نہیں مل سکا۔

مولانا کہتے تھے کہ تین ماہ میں حکومت ختم ہوجائے گی لیکن اب انہیں اپنے ہی اتحادی چھوڑرہےہیں۔ تین استعفوں کے حوالے سے ڈاکٹر شاہد مسعود نے کہا تھا کہ یہ تین استعفوں میں سے ایک تو وزیراعظم عمران خان، دوسرا وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار اور تیسرا وزیراعلیٰ خیبرپختونخواہ محمود خان کا تھا۔ دوسری جانب حکومت نے مولانا فضل الرحمان پر غداری کا مقدمہ چلانے کا فیصلہ دیا تھا۔ اس حوالے سے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ مولانا فضل ارحمان کے خلاف آرٹیکل 6 کے تحت مقدمہ چلایا جائے۔ مولانا صاحب کی مشکلات میں مزید اضافے سے متعلق اب سینئر صحافی رانا عظیم نے یہ بھی دعویٰ کیا ہے کہ انکو انکی پارٹی کے ہی ارکان چھوڑ جائینگے اور انکی پارٹی ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.