مولانا فضل الرحمان کا آزادی مارچ رکوانے کیلئے حکومت نے کس سے مدد مانگ لی

Spread the Story

لاہور(جی سی این رپورٹ)حکومت مخالف آزادی مارچ کو ناکام بنانے کے لیے حکومت کے سیاسی رابطوں اور مشاورت کے سلسلوں میں تیزی آگئی، موجودہ ملکی سیاسی صورتحال میں چودھری شجاعت ایک مرتبہ پھر اہمیت اختیار کرگئے، حکومت نے اہم مسئلے پر شجاعت اور پرویز الٰہی سے مدد مانگ لی۔گزشتہ ہفتے 3 وفاقی وزراء شیخ رشید احمد بریگیڈئیر اعجاز شاہ اور فواد چودھری نے شجاعت اور پرویز الٰہی سے مختصر وقفوں میں یکے بعد دیگرے ملاقاتیں کی ہیں بظاہر انکا مقصد سابق وزیراعظم شجاعت کی خیریت دریافت کرنا تھا لیکن حقیقی مقصد سب سے اہم آزادی مارچ کے حوالے سے مشاورت تھا۔ ملاقاتوں میں آزادی مارچ پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔ملا قاتوں میں آزادی مارچ کو ناکام بنانے کےلئے تمام ممکنہ حکمت عملی پر بھی غور کیا گیااور مولانا فضل الرحمن کے آزادی مارچ کو اجازت نہ دینے پر بھی بات کی گئی جس پر شجاعت حسین نے وزراء کو طاقت کا استعمال کرنے سے منع کرتے ہوئے کہا کہ آپ وہ غلطی نہ دہرائیں جو ن لیگ نے ماڈل ٹاؤن میں کی تھی طاقت کا استعمال موجودہ ملکی صورتحال میں انتہائی خطرناک ہوگا۔ مولانا سے بات چیت اور معاملات کو باہمی مذکرات کے ذریعے حل کرنے کی کوششیں کی جائیں۔ذرائع کے مطابق وزراء نے چودھری برادران کو وزیراعظم کی جانب سے اہم پیغام بھی پہنچایا ہے جس میں مولانا فضل الرحمن سے مصالحت کے لیے ثالث کا کردار ادا کرنے کا کہا گیا ہے جس پر شجاعت نے فی الوقت کوئی جواب نہیں دیا ۔ذرائع کے دعوے کے مطابق وزیراعظم عمران خاں خود بھی عنقریب چودھری برادران سے ملاقات کریں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.