چراغ تلے اندھیرا،وزیراعظم کے اپنے حلقے میں تعلیم کا کیا حال؟

Spread the Story

میانوالی (مسعود نیازی سے)وزیراعظم عمران خان کے حلقہ میں واقع سکولوں کے نہم کے ناقص ترین نتائج پر سیکرٹری ایجوکیشن محمد محمود میانوالی پہنچ گئے، ایجوکیشن افسروں کے ساتھ تین گھنٹے تک میٹنگ اور ان کی سخت سرزنش کی ، 6 سکولوں کے پرنسپلز اور اساتذہ کو پیڈا ایکٹ کے تحت شوکاز نوٹس جاری کر دئیے،عیسیٰ خیل کے ایک سرکاری سکول کے عارضی ہیڈ ماسٹر نے بتایا کہ بیشتر سکولوں کے نتائج انتہائی مایوس کن ہونے کی بڑی وجہ پنجاب ایگزامینیشن بورڈ کے زیر انتظام لیے گئے پانچویں اور آٹھویں کلاس کے بورڈ کے امتحانات ہیں جن میں سب بچوں کو پاس کر دیا جاتا ہے،انہوں نے بتایا کہ نتائج کی بنیاد پر ان طلبہ کو داخلہ دینا مجبوری ہے لیکن ان میں سے کئی بچے اپنا نام بھی نہیں لکھ سکتے اور انہیں اے بی سی بھی پڑھانی پڑتی ہے،انہوں نے مزید بتایا کہ دوسری بڑی وجہ یہ ہے کہ جن سکولوں کے نتائج برے آئے وہاں زیادہ تر عارضی ہیڈ ماسٹر تعینات ہیں،مستقل ذمہ داری نہ ہونے پر سٹاف ان کی بات پر توجہ نہیں دیتا، سکولوں میں سہولیات تو موجود ہیں لیکن اساتذہ کم ہیں،ذرائع کے مطابق گزشتہ تین ماہ کے دوران محکمہ تعلیم کے تقریباً 12 چیف ایگزیکٹو تبدیل ہوچکے ہیں،اراکین اسمبلی سبطین خان اور امجد خان کے کہنے پر آئے روز محکمہ ایجوکیشن کے افسر وں کے تبادلے معمول ہیں، سکولوں میں اساتذہ کی حاضری نہ ہونے کے برابر ہے، اساتذہ سیاسی تعلقات استعمال کرکے کارروائی نہیں ہونے دیتے۔ میانوالی میں وزیراعظم عمران خان نے نمل یونیورسٹی پر ہی توجہ مرکوز کر رکھی ہے، ضلعی انتظامیہ کے افسر اور خصوصاً ڈی سی اکثر نمل یونیورسٹی کا دورہ کرتے ہیں جبکہ سرکاری سکولوں کو بہتر کرنے کا خیال نہ پنجاب حکومت کو آیا اور نہ ہی اس میں وفاقی حکومت نے دلچسپی لی ، یہاں بچوں کو تعلیم دینے یا نتائج بہتر کرنے کیلئے کوئی موثر مانیٹرنگ یا نظم وضبط موجود نہیں، پسماندہ علاقہ ہونے کے باعث طلبہ کی توجہ بھی تعلیم کی طرف کم دکھائی دیتی ہے۔ یہاں غریب لوگ زیادہ ہیں جو بچوں کی ٹیوشن کے اخراجات بھی نہیں اٹھا سکتے۔ واضح رہے کہ وزیر اعظم کے حلقے کے متعدد سکولوں میں نہم کا رزلٹ صفر رہا ،میانوالی کی تحصیل عیسیٰ خیل کے کئی سکولوں کے رزلٹ نے حکام کو بھی چونکا کر رکھ دیا ہے،گورنمنٹ ہائی سکول ٹولہ بانگی خیل میں نویں کے 65 میں سے65 طلبا فیل جبکہ گورنمنٹ ہائی سکول کھگلانوالہ کے تمام 23 طلبا فیل ہوگئے گورنمنٹ ہائی سکول تبی سر میں نویں کے 83 طلبا میں صرف 3 پاس ہوئے، اس کے علاوہ گورنمنٹ بوائز ہائی سکول ون میں 206 میں سے 32 جبکہ گورنمنٹ بوائز ہائی سکول ٹو کے 100طلبا میں سے صرف 8 پاس ہوئے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.