کورونا وائرس ہونے کے باوجود مریض کی نقل و حرکت جاری، سکریننگ کا عمل بے نقاب، ویڈیو دیکھیں

Spread the Story

اسلام آباد (جی سی این رپورٹ) کورونا وائرس کے شکار مریض کی ایئر رپورٹ پر نقل و حرکت کرتے ویڈیو منظر عام پر آگئی ۔ تفصیلات کے مطابق کورونا وائرس مثبت ہونے کے باوجود مریض کو اسلام آباد ایئرپورٹ سے پشاور لے جایا گیا جہاں انہیں سی ایم ایچ اور پھر خیبر ٹیچنگ ہسپتال منتقل کیا گیا ۔ سینئر صحافی ارشد شریف کی جانب سے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ایک ویڈیو شیئر کی گئی جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ کورونا وائرس کے مریض کا جسم کانپ رہا ہے۔سانس لینے میں دشواری کا سامنا ہے۔ اور شدید کھانسی کرتے نظر آرہا ہے۔ کورونا وائرس کا مریض کے سفر کرنے پر پابندی نہیں لگائی گئی جو آزادانہ طور پر اسلام آباد سے پشاور منتقل کیا گیا ۔ جہاں اسے پہلے سی ایم ایچ پھر خیبر ٹیچنگ ہسپتال میں منتقل کیا گیا ۔ارشد شریف نے لکھا کہ ایئر پورٹ پر سکریننگ کا عمل بُری طرح بے نقاب ہو گیا ہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ پوری دنیا میں کورونا وائرس کے باعث لاک ڈاوٴن جاری ہے۔فیصلے کرنیو الے بہتر فیصلوں میں تاخیر کیوں کر رہے ہیں۔ ابھی تک کورونا وائرس کے مریضوں پر بھی سفری پابندی عائد نہیں کی گئی۔ واضح رہے کہ اٹلی اور جنوبی کوریا میں صرف ایک شخص نے تباہی مچا دی تھی۔ اس لئے احتیاطی تدابیر کو مدنظر رکھتے ہوئے کورونا وائرس کے مریض کو نقل وحرکت کی اجاز ت دینا کسی بڑے خطرے سے کم نہیں ہے۔ حکومت کو چاہیے کہ کورونا وائرس کی دیگر افراد میں منتقلی کو روکنے کیلئے ہر اقدام اٹھائے۔دنیا بھر میں تباہی کے بعد پاکستان میں بھی کورونا وائرس کے وار جاری ہیں۔ ملک بھر میں اب تک 453 تصدیق شدہ کیسز سامنے آگئے ہیں۔ کیسز کی تعداد چند ہی دنوں میں چار سو سے زائد ہو گئی ہے ۔ کورونا وائرس کی تعداد کا تیزی سے بڑھنا ہی اسے خطرناک بناتا ہے۔ ملک میں 3 افراد بھی اس خطرناک وائرس سے جان بحق ہو چکے ہیں۔ کُل 453 کیسز میں سے سب سے بڑی تعداد سندھ سے ہے ۔جس کی وجہ ایران زائرین کی سندھ میں بڑی تعداد میں واپسی ہے ، اب تک 245 کیسز سامنے آچکے ہیں۔ جبکہ دوسرے نمبر پر بلوچستان ہے جہاں کیسز کی تعداد 81 ہو چکی ہے۔ آبادی کے اعتبار سے سب سے بڑے صوبے پنجاب میں 78 افراد اس خطرناک وائرس سے متاثر ہو چکے ہیں۔ خیبر پختونخوا میں 23 ،وفاقی دارالحکومت میں 2 گلگت میں 23 جبکہ آزاد کشمیر میں اب تک ایک مریض سامنے آیا ہے۔ دوسری جانب اب تک 4 افراد اس مرض سے صحتیاب ہو چکے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.