براعظم انٹارکٹیکا کی تاریخ میں پہلی بار ایسا کام ہو گیا جو پہلے کبھی نہ ہوا

Spread the Story

اسلام آباد(جی سی این رپورٹ)دنیا کے انتہائی جنوب میں واقع براعظم انٹارکٹیکا کی تاریخ میں پہلی بار درجہ حرارت 20 ڈگر ی سینٹی گریڈ سے تجاوز کرگیا۔

برازیل سے تعلق رکھنے والے سائنسدان کارلوس شائیفر نے فرانسیسی خبر رساں ایجنسی کو بتایا کہ انہوں نے انٹارکٹیکا میں درجہ حرارت اتنا بلند کبھی نہیں دیکھا۔

ان کا کہنا ہے کہ 9 فروری 2020 کو انٹارکٹیکا کے ایک حصے میں درجہ حرارت 20.75 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جو اب تک کی تاریخ میں سب سے زیادہ ہے۔

تاہم ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ یہ صرف ایک ریڈنگ ہے اور طویل المدتی ڈیٹا سیٹ کا حصہ نہیں۔

گزشتہ ہفتے بھی براعظم نے گرمی میں ریکارڈ توڑا تھا اور درجہ حرارت 18.3 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا تھا۔

تازہ ترین ریڈنگ جزیرہ سیمور میں قائم ایک مانیٹرنگ اسٹیشن پر لی گئی تھی، یہ جزیرہ براعظم انٹارکٹیکا کے انتہائی شمال میں واقع ہے۔
ریکارڈ کیا جانے والا درجہ حرارت اب تک کا سب سے زیادہ ہے لیکن اس کے باوجود کارلوس شائیفر کہتے ہیں کہ مذکورہ ریڈنگ کسی طویل المدتی تحقیق کا حصہ نہیں تھی لہٰذا اسے براعظم میں درجہ حرارت کا رجحان طے کرنے کیلئے استعمال نہیں کیا جاسکتا۔

انہوں نے کہا کہ ہم اس ریڈنگ کو مستقبل میں موسمیاتی تبدیلیوں کی پیش گوئی کیلئے استعمال نہیں کرسکتے البتہ یہ ہمیں اس بات کا اشارہ ضرور دیتا ہے کہ علاقے میں کچھ مختلف ہورہا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.